1,893

ولایت علی ابن ابی طالب علیہ السلام لازمی ہے

Print Friendly, PDF & Email

الله عزوجل نے انسانوں پر جن چیزوں کو واجب کیا ہے اُن میں اُس کی توحید کا اقرار ہے, اُس کے نبی کی نبوّت کا اقرار ہے اور حضرت علیؑ ابن ابی طالب کی ولایت کا اقرار بھی ہے. جس طرح اُس کی توحید اور نبی کی نبوّت کے اقرار میں کوئ رعایت نہیں ہے اسی طرح خالق کائنات نے مولا علیؑ کی ولایت کے اقرار میں بھی کسی طرح کی کوتاہی کی گنجائش نہیں رکّھی ہے. اس معاملے میں اُس نے انبیاء کرام سے بھی اُن کی ولایت کے قبول کرنے کا مطالبہ رکّھا ہے. بلکہ روایتوں میں تو یہ بھی ملتا ہے کہ جتنا زیادہ اِن انبیاءؑ نے اِس ولایت کو تسلیم کیا ہے اُتنا زیادہ اُن کا رتبہ اور مرتبہ خدا کے نزدیک بلند سے بلند تر ہوا ہے.

ﮐﺘﺎﺏ ﺍﻟﻤﻌﺼﻼﺕ ﮐﮯ ﺣﻮﺍﻟﮯ ﺳﮯ ﻣﺤﻤﺪ ﺑﻦ ﺛﺎﺑﺖ ﺳﮯ ﻧﻘﻞ ہواہے کہ ﺍﯾﮏ ﻣﺮﺗﺒﮧ ﻣﯿﮟ ﺍﻣﺎﻡ ﺯﯾﻦ ﺍﻟﻌﺎﺑﺪﯾﻦ ﻋﻠﻴﻪ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﮐﯽ ﺧﺪﻣﺖ ﻣﯿﮟ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﺗﮭﺎ ﺍﺗﻨﮯ ﻣﯿﮟ ﻋﺒﺪﺍﻟﻠﮧ ﺑﻦ ﻋﻤﺮ ﺁﯾﺎ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﻧﮯ ﺁﭖ ﻋﻠﻴﻪ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﺳﮯ ﮐﮩﺎ ﻣﺠﮭﮯ ﺍﻃﻼﻉ ﻣﻠﯽ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺁﭖ ﻋﻠﻴﻪ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﮐﮩﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﮐﮧ ﺣﻀﺮﺕ ﯾﻮﻧﺲ ﻋﻠﻴﻪ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﭘﺮ ﺁﭖ ﮐﮯ ﺩﺍﺩﺍ ﮐﯽ ﻭﻻﯾﺖ ﭘﯿﺶ ﮐﯽ ﮔﺌﯽ ﺗﮭﯽ ﻣﮕﺮ ﺍﻧﮩﻮﮞ ﻧﮯ ﺗﺮﺩﺩ ﮐﺎ ﺍﻇﮩﺎﺭ ﮐﯿﺎ ﺗﮭﺎ ﺟﺲ ﮐﯽ ﻭﺟﮧ ﺳﮯ ﺍﻟﻠﮧ ﻧﮯ ﺍﻧﮩﯿﮟ ﺷﮑﻢ ﻣﺎﮨﯽ ﻣﯿﮟ ﻗﯿﺪ ﮐﯿﺎ ﺗﮭﺎ
ﺍﻣﺎﻡ ﻋﻠﻴﻪ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﻧﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﺍﺱ ﻣﯿﮟ ﺗﻌﺠﺐ ﮐﯽ ﮐﻮﻥ ﺳﯽ ﺑﺎﺕ ﮨﮯ؟

ﺍﺱ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﻣﯿﮟ ﺍﺱ ﺑﺎﺕ ﮐﻮ ﻣﺎﻥ ﻧﮩﯿﮟ ﺳﮑﺘﺎ ﺁﭖ ﻋﻠﻴﻪ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﻧﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﺗﻮ ﮐﯿﺎ ﺗﻮ ﺍﺱ ﻣﭽﮭﻠﯽ ﮐﻮ ﺍﭘﻨﯽ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﺳﮯ ﺩﯾﮑﮭﻨﺎ ﭼﺎﮨﺘﺎ ﮨﮯ؟
ﺍﺱ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﺟﯽ ﮨﺎﮞ ﺁﭖ ﻋﻠﻴﻪ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﻧﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﺍﭼﮭﺎ ﺑﯿﭩﮫ ﺟﺎﺅ ﻭﮦ ﺑﯿﭩﮫ ﮔﯿﺎ ﺁﭖ ﻧﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﻏﻼﻡ ﺳﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﮐﮧ ﺩﻭ ﮐﭙﮍﮮ ﮐﯽ ﭘﭩﯿﺎﮞ ﻟﮯ ﺁﺅ ﻏﻼﻡ ﺩﻭ ﭘﭩﯿﺎﮞ ﻟﮯ ﺁﯾﺎ ﺁﭖ ﻋﻠﻴﻪ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﻧﮯ ﻣﺠﮫ ﺳﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﮐﮧ ﺗﻢ ﺍﯾﮏ ﭘﭩﯽ ﻋﺒﺪﺍﻟﻠﮧ ﺑﻦ ﻋﻤﺮ ﮐﯽ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﭘﺮ ﺑﺎﻧﺪﮪ ﺩﻭ ﺍﻭﺭ ﺍﯾﮏ ﭘﭩﯽ ﺧﻮﺩ ﺍﭘﻨﯽ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﭘﺮ ﺑﺎﻧﺪﮪ ﻟﻮ ﻧﻮﮐﺮ ﻧﮯ ﺣﮑﻢ ﮐﯽ ﺗﻌﻤﯿﻞ ﮐﯽ ﭘﮭﺮ ﺁﭖ ﻋﻠﻴﻪ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﻧﮯ ﮐﻮﺋﯽ ﮐﻼﻡ ﮐﯿﺎ ﮐﭽﮫ ﺩﯾﺮ ﺑﻌﺪ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﮐﮧ ﺍﺏ ﺗﻢ ﺩﻭﻧﻮﮞ ﺍﭘﻨﯽ ﺍﭘﻨﯽ ﭘﭩﯿﺎﮞ ﮐﮭﻮﻝ ﻟﻮ ﮨﻢ ﻧﮯ ﭘﭩﯿﺎﮞ ﮐﮭﻮﻟﯿﮟ ﺗﻮ ﮨﻢ ﻧﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﺁﭖ ﮐﻮ ﺍﯾﮏ ﭼﺎﺩﺭ ﭘﺮ ﺑﯿﭩﮭﺎ ﮨﻮﺍ ﺩﯾﮑﮭﺎ ﺍﻭﺭ ﮨﻢ ﻧﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﺁﭖ ﮐﻮ ﺳﺎﺣﻞ ﺳﻤﻨﺪﺭ ﭘﺮ ﭘﺎﯾﺎ ﭘﮭﺮ ﺁﭖ ﻋﻠﻴﻪ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﻧﮯ ﺍﯾﮏ ﮐﻼﻡ ﮐﯽ ﺟﺲ ﮐﯽ ﻭﺟﮧ ﺳﮯ ﺳﻤﻨﺪﺭ ﮐﯽ ﻣﭽﮭﻠﯿﺎﮞ ﻇﺎﮨﺮ ﮨﻮﺋﯿﮟ ﺍﻥ ﮐﮯ ﺩﺭﻣﯿﺎﻥ ﺍﯾﮏ ﺑﮩﺖ ﺑﮍﯼ ﻣﭽﮭﻠﯽ ﻧﻤﻮﺩﺍﺭ ﮨﻮﺋﯽ ﺁﭖ ﻋﻠﻴﻪ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﻧﮯ ﺍﺱ ﺳﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﺗﯿﺮﺍ ﻧﺎﻡ ﮐﯿﺎ ﮨﮯ؟

ﺍﺱ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﻣﯿﺮﺍ ﻧﺎﻡ ﻧﻮﻥ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﻣﯿﮟ ﻧﮯ ﮨﯽ ﯾﻮﻧﺲ ﭘﯿﻐﻤﺒﺮ ﮐﻮ ﻧﮕﻼ ﺗﮭﺎ ﺁﭖ ﻋﻠﻴﻪ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﻧﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﯾﻮﻧﺲ ﻋﻠﻴﻪ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﮐﻮ ﺗﯿﺮﮮ ﺷﮑﻢ ﻣﯿﮟ ﻗﯿﺪ ﮐﯿﻮﮞ ﮐﯿﺎ ﺗﮭﺎ؟

ﻣﭽﮭﻠﯽ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﺍُن ﮐﮯ ﺳﺎﻣﻨﮯ ﺁﭖ ﮐﮯ ﻭﺍﻟﺪ ‏( ﻋﻠﯽؑ ‏) ﮐﯽ ﻭﻻﯾﺖ ﭘﯿﺶ ﮐﯽ ﮔﺌﯽ ﺗﮭﯽ اُنہوں ﻧﮯ ﺍﺱ ﮐﺎ ﺍﻧﮑﺎﺭ ﮐﯿﺎ ﺍﺳﯽ ﻟﯿﮯ ﺍﺳﮯ ﻣﯿﺮﮮ ﺷﮑﻢ ﻣﯿﮟ ﻗﯿﺪ کئے ﮔئے ﺗﮭے ﺍﻭﺭ ﺟﺐ ﺍُنہوں ﻧﮯ ﻣﯿﺮﮮ ﺷﮑﻢ ﻣﯿﮟ ﺭﮦ ﮐﺮ ﻭﻻﯾﺖِ ﻋﻠﯽؑ ﮐﺎ ﺍﻗﺮﺍﺭ ﮐﯿﺎ ﺍﻭﺭ ﺍنہیں ﺍُﻥ ﮐﯽ ﻭﻻﯾﺖ ﮐﺎ ﯾﻘﯿﻦ ﺁﮔﯿﺎ ﺗﻮ ﺍﻟﻠﮧ ﻧﮯ ﻣﺠﮭﮯ ﺣﮑﻢ ﺩﯾﺎ ﻣﯿﮟ ﻧﮯ ﺍنہیں ﺑﺎﮨﺮ ﺍﮔﻞ ﺩﯾﺎ ﺗﮭﺎ ﺍﻭﺭ ﺟﻮ ﺑﮭﯽ ﺍﮨﻠﺒﯿﺖؑ ﮐﯽ ﻭﻻﯾﺖ ﮐﺎ ﻣﻨﮑﺮ ﮨﻮ ﮔﺎ ﺍﻟﻠﮧ ﺍﺳﮯ ﻧﺎﺭ ﺩﻭﺯﺥ ﮐﮯ ﺳﭙﺮﺩ ﮐﺮ ﺩﮮ ﮔﺎ ﺟﮩﺎﮞ ﻭﮦ ﮨﻤﯿﺸﮧ ﺭﮨﮯ ﮔﺎ۔ﻣﻌﺠﺰﺍﺕ ﺁﻝ ﻣﺤﻤﺪ – ﻋﻼﻣﮧ ﺳﯿﺪ ﮨﺎﺷﻢ ﺍﻟﺒﺤﺮﺍﻧﯽ – ﺝ ٢ – ﺍﻟﺼﻔﺤﺔ ٣٢٨،٣٢٧

اس رویت سے نہ صرف حضرت علی علیہ السلام کی ولایت کی اہمیت کا اندازہ ہوتا ہے بلکہ تمام اہلبیت علیہم السلام کی ولایت کی اہمیت کا پتہ چلتا ہے. اِس ولایت کے قبول نہ کرنے میں کسی کو رعایت نہیں ہے.جب نبی خدا کے لئے اس کا قبول کرنا لازمی ہے تو عام امتی کی کیا حیسیت ہے.

ﺍﻟﺤﻤﺪﻟﻠﮧ ﺍﻟﺬﯼ ﺟﻌﻠﻨﺎ ﻣﻦ ﺍﻟﻤﺘﻤﺴﮑﯿﻦ ﺑﻮﻻية ﺍﻣﯿﺮﺍﻟﻤﻮﻣﻨﯿﻦ ﻋﻠﯽ ﺍﺑﻦ ﺍﺑﯽ ﻃﺎﻟﺐ(ع).

ولایت علی ابن ابی طالب علیہ السلام لازمی ہے” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.